موبائل فون کی درآمدی مالیت پر 6 مختلف سلیبس میں فلیٹ ریٹس پر ریگولیٹری ڈیوٹی متعارف

Mobile
5

مانیئٹرنگ ڈیسک (24 گھنٹے )

Regulatory Duty

حکومت نے موبائل فون کی درآمدی مالیت پر 6 مختلف سلیبس میں فلیٹ ریٹس پر ریگولیٹری ڈیوٹی متعارف کروادی، جس کا مقصد زیادہ قیمت کے موبائل فون کے مقابلے میں عام فون پر کم ٹیکس کرنا ہے۔

موقئر روزنامہ ڈان کے مطابق 30 ڈالر تک کے موبائل فون کی درآمد پر ریگولیٹری ڈیوٹی پہلے کے 250 روپے کے مقابلے میں اب 1800 روپے فی سیٹ چارج کیے جائیں گے جبکہ 500 ڈالر سے زائد کے موبائل فون کی درآمد پر 18 ہزار 5سو روپے ادا کرنے ہوں گے۔یاد رہے کہ اس سے قبل 60 ڈالر تک کی مالیت کے موبائل فون کی درآمد پر 250 روپے فی سیٹ ریگولیٹری ڈیوٹی تھی جبکہ 60 سے 130 ڈالر کے درمیان کی قیمت کے قیمت کے لیے 10 فیصد اور 130 ڈالر سے زائد پر 20 فیصد درآمدی قیمت کا ادا کرنا ہوتا تھا۔

فنانس سپلیمنٹری (ترمیمی) بل 2018 کے ذریعے ریگولیٹری ڈیوٹی کے اسٹرکچر میں تبدیلی سے درآمدی مرحلے میں موبائل فون کی منصفانہ تقسیم کی سہولت کے ذریعے زیادہ آمدنی جمع کرنے میں مدد ملے گی۔مسافروں کے سامان کے ذریعے ڈیوٹی فری درآمدات اور مارکیٹ میں کھلے عام فروخت کی رپورٹس کے تناظر میں موبائل فون کی درآمد پر سخت حکمت عملی اپنائی گئی ہے، موبائل فون کی اسمگلنگ سمیت اس تمام صورتحال کو دیکھنے کے لیے حکومت نے رجسٹریشن کے لیے ڈیوٹی کی ادائیگیوں کا علیحدہ نظام متعارف کروایا ہے۔

واضح رہے کہ مئی 2018 میں پاکستان ٹیلی کمیونکیشن اتھارٹی نے ملک میں غیر معیاری اور استعمال شدہ موبائل فونز کی اسمگلنگ کو روکنے کے لیے ڈیوائس آئڈینٹی فکیشن رجسٹریشن اینڈ بلاکنگ سسٹم (ڈی آئی آر بی ایس) کا آغاز کیا تھا۔

جواب چھوڑیں