میثاق معیشت مذاق معشیت ہے ۔ نواز شریف کو مرسی نہیں بننے دینگے ۔ مریم نواز

Maryam Nawaz
14

مانیٹئرنگ ڈیسک لاہور (24 گھنٹے )

Maryam Nawaz

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر اور پارٹی قائد نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے میثاق معیشت کی مخالفت کردی

میثاق معیشت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ شہباز شریف نے میثاق معیشت پر بات کی ہے، میری ذاتی رائے ہے میثاق معیشت مذاق معیشت ہے، جس شخص نے معیشت کا بیڑا غرق کیا اس سے کس قسم کی بات چیت نہ کی جائے، معیشت کا بیڑا غرق کرنے والے سے میثاق نہیں کرنا چاہیے۔

 انہوں نے  کہا کہ کہ نالائق اعظم نے اسٹاک ایکسچنج کو ڈبو دیا، عوام کا جینا دو بھر ہو گیا، میثاق معیشت کا مطلب حکومت کو این آر او دینا ہے، گرتی ہوئی ساکھ کو سہارا دیا گیا تو اپوزیشن برابر کی مجرم ہو گی۔

مریم نواز نے کہا میاں صاحب کی صحت کا معاملہ 22 کروڑ عوام کے سامنے رکھنا چاہتی ہوں، ان کا دل کا عارضہ 20 سال پرانا ہے اور انہیں تین بار ہارٹ اٹیک ہو چکے ہیں۔

مریم نواز نے بتایا کہ میاں صاحب کو تیسرا ہارٹ اٹیک اڈیالہ جیل میں قید کے دوران ہوا جس سے ہمیں لاعلم رکھا گیا، ان کا کیا علاج کیا گیا مجھے علم نہیں لیکن بعد میں معالج نے بتایا کہ میاں صاحب کو اٹیک ہوا تھا

انہوں نے کہا کہ میاں صاحب کا بائی پاس ان کی وزارت عظمیٰ کے دوران کیا گیا، انہیں ایک اور بائی پاس کی ضرورت ہے کیونکہ میاں صاحب کی بڑی شریان 95 فیصد بند ہے اور کڈنی کا اسٹیج تھری کا مسئلہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ انجائنا کے دوران میاں صاحب اسپرے اور دوائیں استعمال کرتے ہیں، ایک بار میاں صاحب کو انجائنا کے دوران سانس بند ہو گئی جس پر انہوں نے زور سے آواز لگائی کہ میں تازہ ہوا میں سانس لینا چاہتا ہوں، نواز شریف کے علاج میں 6 ہفتے یا 6 ما نہیں مہینے سال اور برسوں لگ سکتے ہیں۔

ن لیگ کی نائب صدر کا کہنا تھا کہ نہتی لڑکی اور بیٹی بیمار باپ سے کیا بات کر رہی ہے اس پر بھی پہرا ہے، نالائق اعظم کو سمجھنا چاہیے کہ وہ شکست کھا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بار بار عدالت کا دروازہ کٹھکھا رہے ہیں، ان شااللہ نواز شریف کو انصاف ضرور ملے گا اور اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو جو لوگ اس میں ملوث ہیں وہ سب اس کے ذمے دار ہوں گے۔

مریم نواز نے کہا نواز شریف کہتے ہیں انہیں ووٹ کو عزت دو کے مؤقف کی سزا مل رہی ہے، نواز نواز شریف سیاسی قیدی ہیں، وہ آئین و قانون اور سویلین بالادستی کی سزا بھگت رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی ملاقاتوں پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے، نواز شریف کے کمرے میں ہماری باتیں سننے کے لیے ایک شخص کی ڈیوٹی لگی رہی، سلاخوں کے پیچھے نواز شریف کی ملاقاتوں کی مانیٹرنگ کی جا رہی ہے، یہ کون سا اخلاق اور تہذیب ہے؟ ان کو شرم آنی چاہیے، نالائق اعظم شکست کھا گیا، نواز شریف آج بھی طاقتور ہے۔

ایک سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ یہ مصر ہے اور نہ ہی نواز شریف کو مُرسی بننے دیں گے، جعلی حکومت سے ریلیف مانگ رہی ہوں نہ وہ دے سکتے ہیں، آخری حد تک نواز شریف کا مقدمہ لڑوں گی

وزیراعظم کی جانب سے اعلیٰ اختیاراتی تحقیقاتی کمیشن کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ مجھ پر تو جے آئی ٹی بن جاتی ہے علیمہ خان پر نہیں، عمران خان اور علیمہ خان نے ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھایا اس پر بھی جے آئی ٹی بننی چاہیے

مریم نواز نے کہا کہ کمیشن قرضوں کا نہیں گرانٹس کا بھی حساب لے گا، کمیشن کولیشن سپورٹ فنڈز کی بھی تحقیقات کرے گا، سوال ان قرضوں پر بھی ہو گا جو نالائق وزیراعظم کی نااہلی پر خرچ ہو گئے۔

جواب چھوڑیں