اگر ہم این آر او دیں گے تو ملک سے غداری کریں گے۔ وزیر اعظم عمران خان

Imran Khan
6

مانیٹئرنگ ڈیسک( 24 گھنٹے)

PM Imran

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جس نے ملک کا دیوالیہ نکالا ان میں سے کسی کو نہیں چھوڑیں گے اور جو بھی سوچ رہا ہےکہ حکومت کسی کو این آر او دے گی تو وہ یہ سمجھے کہ اگر ہم این آر او دیں گے تو ملک سے غداری کریں گے آج کل این آر او کی بہت بات ہورہی، این آر او کا مطلب ہے کہ بڑے بڑے مجرموں کو معاف کردیں، ملک کو 2 این آر او نے بہت نقصان پہنچایا، ایک این آر او نے جنرل پرویز مشرف نے نواز شریف کو ملک سے باہر جانے کے لیے دیا جبکہ دوسری طرف 2 ارب روپے آصف علی زرداری کے کیس پر خرچ کیا گیا۔

وہ لاہور کے قریب بلوکی میں تقریب سے خطاب کرہے تھے

انہوں نے کہا کہ لندن میں سر محل کا مقدمہ پاکستان جیت گئی لیکن این آر او کی وجہ سے یہ کیس چھوڑ دیا گیا اور قوم کی 2 ارب روپے کو ضائع کیا گیا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ انہیں 2 این آر او رہنماؤں نے 5، 5 سال حکومت کی اور ملک کا قرضہ 6 کھرب سے بڑھا کر 30 کھرب روپے تک پہنچا دیا گیا کیونکہ یہاں بڑے بڑے چوروں کو پکڑنے کا کوئی خوف نہیں تھا۔

انہوں نے تسلیم کیا کہ مہنگائی بڑھ رہی ہے اور روپے کی قدر کم ہورہی ہے لیکن ملک کو مقروض کرنے والے آج ٹی وی پر آکر تحریک انصاف کو کہتے ہیں کہ آپ نے 5 مہینے میں کچھ نہیں کیاوزیر اعظم کا کہنا تھا کہ جس نے کرپشن کی ہم نے کسی کو نہیں چھوڑنا، اسمبلی میں شور مچایا جارہا ہے لیکن ہماری کوشش ہے کہ صحیح طریقے سے چل جائے، جتنی ہم نے کوشش کرنی تھی کرلی لیکن اب کسی بدعنوان آدمی کو کسی قسم کی رعایت نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں کبھی ایسا نہیں ہوا کہ حکومت کو 5 ماہ ہوں اور اس کے 3 وزیر مستعفی ہوں یہ ہے تبدیلی ہے کہ موجودہ حکومت بلاامتیاز احتساب کرتی ہےعمران خان نے مزید کہا کہ بلوکی پارک کو ہم بابا گرونانک کے نام پر تیار کریں اور ہم جلد ہی گرونانک یونیورسٹی قائم کریں گے کیونکہ مجھے اچھا لگتا ہے جب لوگ اسکول، کالجز اور جامعات کا مطالبہ کرتے ہیں، میں پاکستان میں موجود تمام اقلیتوں کو کہنا چاہتا ہوں کہ ہم وہ پاکستان بنا رہے ہیں جس میں تمام سہولیات فراہم ہوں۔

وزیر اعظم عمران خان نے بلوکی میں پودہ لگا کر ’پلانٹ فار پاکستان‘ پروگرام کا آغاز کردیا اس موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ درخت لگانا شوق کی بات نہیں بلکہ یہ مستقبل کے لیے زندگی اور موت کا سوال ہوگیا ہے، پاکستان دنیا میں آٹھویں نمبر پر وہ ملک ہے جسے سب سے زیادہ ماحولیاتی خطرے کا سامنا ہے

عمران خان کا کہنا تھا کہ اگر موسم اسی طریقے سے گرم ہوتا گیا تو آنے والے دنوں میں یہاں رہنا مشکل ہوجائے گا، یہاں خشک سالی ہوگی اور دریاؤں میں پانی کم ہوجائے گا کیونکہ ہماری ملک میں سب سے کم جنگلات ہیں۔

جواب چھوڑیں