نقیب اللہ قتل کیس ۔ ایک ملزم کے مکر جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ۔آئی جی سندھ

AD Khawaja
42

مانیٹئرنگ ڈیسک (24 گھنٹے)

Naqeeb Murder

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا ہےکہ نقیب اللہ قتل کیس میں پولیس کے ایک گواہ کےمکرجانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔

نقیب اللہ قتل کیس میں نامزد مرکزی ملزم راؤ انوار ان دنوں جوڈیشل ریمانڈ پر اپنی رہائش میں قید ہیں جسے سب جیل قرار دیا گی ہے  جب کہ عدالت نےکیس میں ملزمان پر 19 مئی کو فرد جرم عائد کرنےکا فیصلہ کیا ہے۔

کورنگی ایسوسی ایشن میں تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نےکہا کہ 26 ہزار پولیس فورس این ٹی ایس ٹیسٹ پاس کر کے مکمل شفافیت سے بھرتی ہوئی، شہر میں ٹریفک کے مسائل سے نمٹنے کے لیے دو سال میں کراچی ٹریفک پولیس کو 200 سے بڑھا کر ساڑھے 7 ہزار کر دیا گیا۔

انہوں نےکہا کہ پورے کراچی میں سیف سٹی منصوبے کے لیے 30 سے 35ارب روپےکی خرچ کرنے ہوں گے، لاہور میں سیف سٹی پروجیکٹ پر15 ارب روپے خرچ کرکے10 ہزار کیمرے نصب کیے گئے ہیں۔

تبصرے بند ہیں.