لائن آف کنٹرول پر بھارتی فائرنگ۔ خاتون جاں بحق ۔بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنرکی دفترخارجہ طلبی

Line of Control
3

مانیٹئرنگ ڈیسک(24 گھنٹے)

Cross-LoC firing

بھارت کی جانب سے ایک بار پھر اشتعال انگیزی کا ثبوت دیتے ہوئے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے اس طرف پاکستانی علاقے میں بلااشتعال فائرنگ کی گئی جس کی زد میں آکر خاتون جاں بحق ہوگئی۔

بھمبر میں سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) ذوالقرنین سرفراز نے بتایا کہ لوانا کھیتر گاؤں میں سرحد کے اس پار سے کی گئی فائرنگ سے 22 سالہ منزہ بی بی جاں بحق ہوگئی جو دو بچوں کی ماں بھی تھیں۔

لوانا کھیتر ایل او سی سے بامشکل ایک کلومیٹر دور ہے۔

ایس ایس پی کا کہنا تھا کہ خاتون کو جمعہ کو رات گئے بھارتی فوج کی پوسٹ سے فائر کی گئی اسنائپر کی گولی اس وقت لگی جب وہ اپنے گھر کے برآمدہ میں روشنی کی مدد سے کچھ تلاش کر رہی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ گولی خاتون کے سر پر لگی جس سے ان کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی۔

منزہ بی بی کے جاں بحق ہونے کے بعد رواں سال ایل او سی پر بھارت کی بلااشتعال فائرنگ سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 27 ہوگئی ہے جس میں 19 مرد اور 8 خواتین شامل ہیں۔

پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو دفتر خارجہ طلب کر کے لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ پر شدید احتجاج کیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج ایل او سی کے قریب پاکستانی شہریوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔

دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو دفتر خارجہ طلب کر کے ایل او سی پر بلا اشتعال فائرنگ پر شدید احتجاج کیا

جواب چھوڑیں