آصف زرداری کیخلاف 6 انکوئریز۔ کیسز میں عبوری ضمانت منظور۔ حکومت مخالف تحریک چلانے کا اعلان

Asif Zardari
6
مانیئٹرنگ ڈیسک اسلام آباد : (24 گھنٹے )
Fake Accounts Case
اسلام آباد ہائیکورٹ نے قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی  کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے خلاف جاری 6 انکوئریز اور کیسز میں عبوری ضمانت منظور کرلی۔
اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل 2 رکنی بینج نے جعلی اکاؤنٹ کیس کی سماعت کی۔
آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور، جن کی عبوری ضمانت آج ختم ہورہی ہے، عدالت پہنچے، جہاں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے جبکہ ہائی کورٹ کے اطراف کی سڑکیں بھی عام ٹریفک کے لیے بند کی گئی تھیں۔
آصف زرداری اور فریال تالپور کے وکلا، ایڈووکیٹ فاروق ایچ نائیک اور سردار لطیف کھوسہ، نے ضمانت میں توسیع کی درخواستیں دائر کیں۔
فاروق ایچ نائیک نے عدالت کو بتایا کہ 21 مئی کو احتساب عدالت نے طلب کر رکھا ہے۔
اسلام آباد ہائیکورٹ نے میگا منی لانڈرنگ کیس میں آصف زرداری کی 22 مئی تک عبوری ضمانت منظور کر لی اور انہیں 5 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کروانے کا حکم دیا۔
عدالت عالیہ نے آصف زرداری کی جن کیسز یا انکوئریز میں عبوری ضمانت منظور کی یا اس میں توسیع دی، ان میں جعلی اکاونٹس کیس، پارک لین کیس، مشکوک ٹرانزیکشن انکوائری، اوپل 225 انکوئری اور توشہ خانہ ویکل انکوئری سمیت دیگر شامل ہیں
سماعت کے بعد عدالت کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سابق صدر آصف علی زرداری نے اعلان کیا کہ وہ اب پارلیمنٹ میں نہیں بلکہ سڑکوں پر حکومت مخالف تحریک چلائیں گے۔
انہوں نے کہا کہ نیب اور معیشت ایک ساتھ نہیں چل سکتی، ان کا دعویٰ تھا کہ ماضی کی اور موجودہ ایمنسٹی اسکیم میں کوئی فرق نہیں۔
آصف زردار کا کہنا تھا کہ جس کے پاس تھوڑے بہت پیسے ہیں وہ بلیک منی کو وائٹ کرلے گا
بلاول بھٹو زرداری کی طلبی کے سوال پر سابق صدر نے کہا کہ وہ میرا بیٹا ہے اسے بھی انہی انگاروں پرچلنا ہے، بلاول بھٹو شہید بی بی کا بیٹا ہے۔
ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ضمانت حاصل کرنا ان کا قانونی حق ہے۔
ایک اور سوال پر آصف زرداری کا کہنا تھا کہ کوئی رابطہ نہیں ہوا، نواز شریف کا میرے پاس نمبر نہیں۔
ان سے سوال کیا گیا کہ کیا نواز شریف کو آپ نے اکیلا نہیں چھوڑ دیا؟ جس پر سابق صدر نے کہا کہ ماشاء اللہ وہ ہشاش بشاش رہ رہے ہیں اور وہ اپنی خواہش کے مطابق اپنے شہر لاہور میں رہ رہے ہیں۔
ایمنسٹی اسکیم کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر آصف زرداری کا کہنا تھا کہ اس اسکیم کا کسی نہ کسی کو تو فائدہ ہوگا لیکن اس کا فائدہ قوم کو نہیں ہوگا۔
صحافی نے سوال کیا کہ عمران خان کہتے تھے کہ ایمنسٹی اسکیم چور اور ڈاکوؤں کے لیے ہے، جس پر سابق صدر نے کہا کہ اس لیے تو اپنے لیے لارہے ہیں۔
آصف زرداری نے تحریک انصاف کے رہنما علیم خان کی ضمانت پر رہائی کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے مبارکباد بھی دی

جواب چھوڑیں