راولپنڈی ۔ 12 سالہ بچے کے ساتھ مبینہ جنسی زیادتی ۔ مدرسے کا معلم گرفتار

Rawalpindi Police Pic
13

مانیٹئرنگ ڈیسک راولپنڈی:  ( 24 گھنٹے )

Cleric Arrested

راولپنڈی کے علاقے دھمیال میں صدر بیرونی پولیس تھانے کے حدود سے مدرسے کے طالبعلم کو مبینہ طور پر ریپ کا نشانہ بنانے پر مدرسے کے استاد کو گرفتار کرلیا گیا۔

نجی نیوز چینل کے مطابق مذکورہ شخص کو پولیس نے 12 سالہ بچے کے طبی معائنے کے بعد گرفتار کیا۔

زرائع  کے مطابق س واقعے کا علم جب سینٹرل پولیس افسر محمد فیصل رانا کو ہوا تو انہوں نے سپرنٹنڈنٹ پولیس صدر رائے مظہر اقبال کو بچے کا طبی معائنہ کروانے کے بعد ملزم کے خلاف کارروائی کرنے کی ہدایت کی۔

ایس پی صدر رائے مظہر اقبال کے مطابق 12 سالہ بچہ جواد ظریف دھمیال کیمپ کی مسجد میں مولوی لیاقت سے دینی تعلیم حاصل کرتا تھا تاہم شکایت کے باوجود والدین کو یقین نہیں تھا کہ مولوی ایسی حرکت کر سکتا ہے۔

رائے مظہر اقبال نے بتایا کہ مولوی صاحب نے اپنے چند حمایتی افراد کے ہمراہ احتجاج بھی کیا لیکن پولیس نے اپنا کام جاری رکھا اور تحقیقات میں مولوی کی لڑکے سے زیادتی ثابت ہو گئی ہے۔

جب پولیس کارروائی کے لیے پہنچی تو ملزم نے دیگر افراد کے ساتھ مل کر اپنے آپ کو بے گناہ ثابت کرنے کی کوشش کی اور پولیس کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔

بچے کے طبی معائنے میں اس بات کی تصدیق ہوگئی کہ اس کے ساتھ بدسلوکی کی گئی ہے جس کے بعد ملزم کو حراست میں لے لیا گیا تاہم پولیس نے اس سلسلے میں ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

جنسی استحصال کا نشانہ بننے والے بچے کے والد کی شکایت پر پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے۔

جواب چھوڑیں